SSUET 62nd BOG Meeting held

SSUET 62nd BOG Meeting held
Vice Chancellor Prof. Dr. Vali Uddin presiding over the 62nd meeting of SSUET Board of Governors
سر سید یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین ، بورڈ آف گورنرز کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں ۔

KARACHI, March 26, 2021 – 62nd meeting of the Board of Governors of Sir Syed University of Engineering and Technology (SSUET) held under the chair of Vice-Chancellor Prof. Dr. Vali Uddin to discuss various issues related to academic and administrative measures. The meeting was attended, among others, by Lt. Gen. (R) Moinuddin Hyder, Cdre. (R) Salim Siddiqi, President KCCI, Shariq Vohra, Saad uz Zaman, Prof. Dr. Abdul Hannnan, Secretary Universities and Boards, Mr. Allamuddin Bloo, Registrar Syed Sarfraz Ali, Director Finance Munaf Advani, Dean Basic & Applied Sciences Prof Dr. Aqeel ur Rehman, Director QEC, Engr. Akhter Nadeem.

The members of BOG unanimously confirmed the minutes of the previous meeting. The Board of Governors has approved the amended organizational structure and job descriptions.

Endowment fund of 15 million for new campus was approved for developing infrastructure at new campus. Construction of mosque, hostels, academic blocks are under consideration.

Besides engineering progamme, Sir Syed University is planning to introduce some new course programs like physical therapy, food sciences and biotechnology including MS program in electrical engineering and Software Engineering, and PhD programme in Civil Engineering. For ongoing programs, the university has acquired all required accreditation by the concerned authorities at national level and is working out to get the international accreditation.

Sir Syed University has collaboration with Pakistan Software Export Board (PSEB) to seek options for developing the IT sector with collaborating efforts. The university in collaboration with IdeaGist and Ministry of Information Technology launched National Ideas Bank. Sir Syed University has also joined hands with the Healthcare and Social Welfare Association (HASWA) for producing prosthetic limbs at a low cost. The university will provide technical and strategic support for the production of automatic limbs of high quality with lower cost.

Vice Chancellor Prof. Dr. Vali Uddin informed that Sir Syed University did not terminate even a single employ because of Covid, neither did cut down the salaries of employees. The university maintains an outstanding teacher-student ratio of 18:1, which satisfies the criteria of HEC, PEC and other accreditation councils.

سرسیدیونیورسٹی کے بورڈ آف گورنرز کے باسٹھویں اجلاس کا انعقاد

کراچی 26مارچ 2021ء : سر سید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے زیراہتمام بورڈ آف گورنرز کے باسٹھویں اجلاس کا انعقاد کیا گیا جس میں جامعہ کے مالی، انتظامی اور تدریسی معاملات زیرِ بحث آئے ۔ اجلاس کے شرکاء میں لیفٹینٹ جنرل (ر) معین الدین حیدر، کموڈور (ر) سلیم صدیقی، کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے صدر شارق ووہرہ، سعدالزماں ، پروفیسر ڈاکٹر عبدالحنان، سیکریٹری یونیورسٹیز و بورڈز علیم الدین بلو، رجسٹرار سید سرفراز علی، ڈائریکٹر مناف ایڈوانی، ڈین بیسک اینڈ اپلائیڈ سائینسز پروفیسر ڈاکٹر عقیل الرحمن، ڈائریکٹر کوالٹی کنٹرول انہانسمنٹ انجینئر اختر ندیم شامل تھے ۔ بورڈ کے ممبران نے گزشتہ اجلاس کے منٹس (minutes) اتفاقِ رائے سے منظور کر لیے اور ترمیم شدہ تنظیمی ڈھانچے کو منظور کر لیا گیا جس میں کام کی نوعیت بھی بیان کی گئی تھی ۔

ایجوکیشن سٹی میں دوسو ایکٹر زمین پر سرسید یونیورسٹی کے نئے کمپس کی تعمیر کے لیے ابتدائی طور پر پندرہ ملین روپے کا انڈومنٹ فنڈز مختص کردیا گیا ہے جہاں پر مسجد، ہوسٹلز، اکیڈمک بلاکس تعمیر کرنے کی منصوبہ بندی کی جارہی ہے ۔

 

انجینئرنگ پروگرام کے علاوہ سرسید یونیورسٹی دیگر نئے شعبے متعارف کرانے جارہی ہے جن میں فزیکل تھراپی، فوڈ سائنسز اور بائیوٹیکنالوجی شامل ہیں ۔ الیکٹریکل اور سافٹ ویئر انجینئرنگ میں ماسٹرز پروگرام بھی شروع کیا جارہا ہے اور سول میں پی ایچ ڈی پروگرام زیرِ غور ہے ۔ قومی سطح پرجامعہ متعلقہ اداروں اور حکام سے موجودہ پروگراموں کی منظوری حاصل کرچکی ہے اور بین الاقوامی معیار کی تصدیق کے لیے بھی متعلقہ اداروں سے منظوری حاصل کرنے کی کوششیں کر رہی ہے ۔

 

انفارمیشن ٹیکنالوجی سیکٹر کی ترقی اور اسے وسعت دینے کے لیے سرسید یونیورسٹی نے پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ کے ساتھ ایک معاہدہ بھی کیا ہے ۔ اس کے علاوہ جامعہ نے وزارتِ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور آئیڈیا جسٹ کے اشتراک سے نیشنل آئیڈیاز بینک قائم کیا ہے جس کا افتتاح صدرِ پاکستان محترم عارف علوی نے کیا ۔ کم قیمت مصنوعی اعضاء کی تیاری کے لیے سرسید یونیورسٹی نے ہیلتھ کیئر اینڈ سوشل ویلفیئر ایسوسی ایشن کے ساتھ بھی اشتراک کیا ہے ۔ اعلٰی معیار کے سستے خودکار مصنوعی اعضا کی تیاری کے لیے سرسید یونیورسٹی ٹیکنیکل مدد فراہم کرے گی ۔

 

وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین نے بتایا کہ کووڈ کی وجہ سے سرسید یونیورسٹی نے نہ ملازمین کی چھانٹی کی اور نہ ہی ان کی تنخواہوں میں سے کٹوتی کی ۔ سرسید یونیورسٹی میں استاد اور طلباء کا تناسب1 :18 ہے جو ہائر ایجوکیشن اور پاکستان انجینئرنگ کونسل کے متعین کردہ معیار پر پورا اترتا ہے ۔