Sir Syed University signed MoU with Ministry of IT and Telecommunication (MOITT)

SIR SYED UNIVERSITY OF ENGINEERING & TECHNOLOGY
University Road, Karachi-75300, Pakistan
Tel.: 4988000-2, 4982393-474583, Fax: (92-21)-4982393

Sir Syed University signed MoU with Ministry of IT and Telecommunication (MOITT)
ICT is important for the socio-economic development of any country – IT Minister Amin ul Haq
Limited employment opportunities led to forced entrepreneurship – Chancellor Jawiad Anwar
Vision of Sir Syed University is to meet the demands of challenging times – VC Dr Vali Uddin

Federal Minister for Information Technology and Telecommunication, Syed Amin ul Haq, visited Sir Syed University to discuss the issues of common interest and options for developing the IT sector with collaborated efforts.
Speaking on the auspicious occasion, Syed Amin ul Haq said our youth has tremendous potential and what they need is a proper guideline for a journey towards success. He pointed out that in Pakistan 3.1% of GDP is reserved for education, yet we are endeavoring to take it to 10% at least.
Syed Amin ul Haq said that the rapid adoption of Information and Communication Technology (ICT) is immensely important for the socio-economic development of any country and our focus is to enhance the growth of Pakistan’s economy. The efforts are paying off as the IT industry is growing in terms of the number of companies, revenue, exports, and workforce every year.
Chancellor SSSUET, Jawaid Anwar said that the time of excuses has gone, and now we need to deliver. To boost the economy of Pakistan, we should cut down the import and increase the volume of exports. Limited employment opportunities led to forced entrepreneurship that offers manufacturing of different components to be assembled later to prepare a product for commercial use. Information technology is a key lever of economic development and innovation is the prime determinant of the rise and fall of societies.
Vice-Chancellor SSUET, Prof. Dr. Vali Uddin welcomed the Federal Minister for Information Technology and Telecommunication and addressing the gathering he said, “The vision of Sir Syed University is to meet the demands of challenging times as envisioned by Sir Syed Ahmed Khan by transforming Pakistan into a knowledge-based society through some impact projects and innovation in education, research, and creativity. The university is playing a leading role as a university of engineering and technology in national socio-economic development by meeting the challenges of modern time through creating alliances and partnerships between academia and industry. The university’s focus is on innovation, research, and commercialization with a deep sense of social and moral responsibility imbued with the Aligarh Spirit.”
Syed Junaid Imam, CEO Ignite, said that Digital Pakistan is based on two pillars skill development, innovation, and entrepreneurship. Collaboration with universities for developing soft skills increases credibility of children globally and locally.
Syed Hassan gave an informative presentation on IT development focusing on National Idea Bank, which is entry point for big and small ideas to be investigated by universities.
Memorandum of Understanding was also signed between Sir Syed University of Engineering & Technology and Ministry of Information Technology and Communication Pakistan. Registrar Syed Sarfraz Ali and Syed Junaid Imam signed the MoU on behalf of Sir Syed University and Ministry of Information Technology and Telecommunication Pakistan respectively. Sir Syed University will provide a platform through National Idea Bank for collecting ideas. The university will develop a sustainable business model for the ideabank.

Abdul Hamid Daccani
Dy Director Information

ر سید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کراچی
یونیورسٹی روڈ کراچی فون نمبرز 34988000-5, 34980059,34980072, فیکس: (92-21)-34982393

سرسید یونیورسٹی اور وزارت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی و مواصلات کے مابین مفاہمتی یادداشت پر دستخط
ترقی کے سفر میں کامیابی کے لئے نوجوانون کو درست سمت میں رہنمائی کی ضرورت ہے۔۔وفاقی وزیرسید امین الحق
جامعہ کی توجہ ایجادات اور تخلیقات پر مرکوز ہے۔چانسلرجاوید انوار
معیشت کے فروغ کے لے کاٹیج انڈسٹری کو فروغ دینابہت ضروری ہے۔۔پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین

کراچی، ۳۲/اکتوبر۰۲۰۲ء۔۔ وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ مواصلات سید امین الحق نے سرسید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کا دورہ کیا اور دوطرفہ دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبہ کی ترقی کے لیے باہمی تعاون بڑھانے اور مشترکہ کوششوں کو فروغ دینے پر غور کیا گیا۔
اس موقع پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر سید امین الحق نے کہا کہ ہمارے نوجوانوں میں بڑا ٹیلنٹ اور پوٹینشل ہے مگرترقی کے سفر میں کامیابی حاصل کرنے کے لئے ان کو درست سمت میں رہنمائی کی ضرورت ہے۔قومی بجٹ میں تعلیم کی مد میں جی ڈی پی کا 3.1 فیصد مختص کیا گیا ہے۔ہم اسے کم سے کم 10فیصد تک لے جانا چاہتے ہیں۔
انھوں نے کہا کہ کسی بھی ملک کی سماجی و معاشی ترقی کے لیے انفارمیشن ایند کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کی بڑی اہمیت ہے اور ہماری پوری توجہ پاکستان کی اقتصادی ترقی پر مرکوز ہے۔اس ضمن میں ہماری کوششیں بارآور ثابت ہورہی ہیں اور آئی ٹی انڈسٹری ہر سال کمپنیوں کی تعداد میں اضافے اور برآمدات کے بڑھتے ہوئے حجم کی شکل میں تیزی سے ترقی کر رہی ہے۔
سرسید یونیورسٹی کے چانسلر جاوید انوار نے کہا کہ حیلے بہانوں کا وقت گزر چکا۔اب کچھ کر دکھانے کا وقت ہے۔پاکستان کی اقتصادی ترقی کے لیے درآمدات کو کم کرکے برآمدات کے حجم کو بڑھانا ہوگا تاکہ زرمبادلہ پاکستان میں آئے۔ملازمتوں کے محدود مواقع کے باعث جبری کاروبار forced entrepreneurshipکی طرف مائل ہونا ایک مجبوری بن گئی ہے۔معیشت کے فروغ کے لے کاٹیج انڈسٹری کو فروغ دینابہت ضروری ہے۔گھروں پر پرزہ جات بنائے جائیں اور بعدازاں انھیں جوڑ کر مصنوعات تیار کی جائیں۔انفارمیشن ٹیکنالوجی کا فروغ، معاشی ترقی کی کنجی ہے اورمعاشرے کے عروج و زوال میں تخلیقات و ایجادات کلیدی کردار ادا کرتے ہیں۔
سرسید یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین نے کہا کہ جامعہ کی توجہ ایجادات اور تخلیقات پر مرکوز ہے۔ہم پاکستان میں ایک ایسا معاشرہ تشکیل دینا چاہتے ہیں جس کی بنیاد علم و فنون پر ہو۔سرسید یونیورسٹی انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کی جامعہ کے طور پرایک موثر کردار ادا کر رہی ہے اور اداروں کے ساتھ باہمی تعاون و اشتراک کے ذریعے سماجی و معاشی ترقی کے لیے جدید دور کے چیلنجز سے بخوبی بنرد آزما ہورہی ہے۔
اس موقع پرسرسید یونیورسٹی اور وزارت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی و مواصلات کے مابین ایک مفاہمتی یادداشت پر دستخط بھی کئے گئے۔سرسید یونیورسٹی کی طرف سے رجسٹرار سید سرفراز علی اور وزارت مواصلات کے طرف سے سید جنید امام نے دستخط کئے۔

                                             (عبدالحامد دکنی)
                                            ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن

(کھڑے ہوئے دائیں سے بائیں) وفاقی وزیرِ سید امین الحق،سرسید یونیورسٹی کے چانسلر جاوید انوار اور سرسید یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین سرسیدیونیورسٹی اور وزارتِ مواصلات کے مابین مفاہمتی یادداشت پر دستخط کرنے کی تقریب کے موقع پر۔